بدھ, مارچ 25, 2015

کوئی رات اتنی طاقتور نہیں کہ وہ صبح کے امکان کو تباہ کردے

کوئی رات اتنی طاقتور نہیں کہ وہ صبح کے امکان کو تباہ کردے

محمد آصف ریاض
احمد فراز( وفات 2008 ) ایک پاکستانی شاعرہیں۔ ان کی نظم کا ایک مشہورشعریہ ہے۔
کہ رات جب کسی خورشید کوشہید کرے
توصبح اک نیا سورج تلاش لاتی ہے
ہمیشہ یہ ہوتا ہے کہ رات صبح پراپنی تاریکی اڑھا دیتی ہے، بظاہرایسا معلوم پڑتا ہے کہ اب یہ تاریکی جانے والی نہیں ہے۔ لیکن ایسا نہیں ہوتا کہ تاریکی صبح کے امکان کو ہمیشہ کے لئے ختم کردے، صبح کا حال یہ ہےکہ وہ دوسرے ہی دن اپنے لئے ایک نیا سورج تلاش لیتی ہے اورپھر ایک نئی آب و تاب کے ساتھ نمودارہوجاتی ہے۔
یہی حال انسانی زندگی کا ہے۔ انسانی زندگی میں ہمیشہ اتارچڑھائو آتا رہتا ہے، اوریہ اتارچڑھائو کبھی ابدی نہیں ہو تا، یہ وقتی ہوتا ہے۔ یہ اتارچڑھائواہل علم کے لئے ایک چیلنج ہوتا ہے، وہ جیسے ہی یہ محسوس کرتے ہیں کہ ان کے ہاتھ سے ایک موقع نکل گیا، وہ فوراً اپنے لئے ایک دوسراموقع پیدا کرلیتے ہیں، جیسے ہی انھیں یہ لگتا ہے کہ ایک امکان استعمال ہونے سے رہ گیا، وہ اپنے لئے ایک دوسرا امکان تلاش لیتے ہیں، جیسے ہی انھیں لگتا ہے کہ ان کے لئے ایک راستہ بند ہوگیا ، وہ اپنے لئے ایک دوسرا راستہ پیدا کرلیتے ہیں۔
امیتابھ بچن بالی ووڈ کے معروف اداکار ہیں۔ انھوں نے اپنی اداکاری سے خوب شہرت پائی اورخوب پیسہ کمایا۔ لیکن عمرکے تقریباً آخری حصہ میں پہنچ کر وہ دیوالیہ ہوگئے، لیکن انھوں نے اپنا عزم نہیں کھویا، اور کون بنے گا کروڑ پتی میں اپنی ایکٹنگ کی مہارت دکھا کر انھوں نے اپنی کھوئی ہوئی دولت اور شہرت کو پھر سے حاصل کرلیا۔  
معروف برٹش فلاسفربرنارڈ ولیم (وفات 2003) کا ایک قول ہے: " کوئی رات یا کوئی مشکل ایسی نہیں جوصبح کی روشنی یا امید کو شکست دے دے۔"
 There was never a night or a problem that could defeat sunrise or hope
قرآن میں رات اوردن کو ایک نشانی بتا یا گیا ہے۔ رات کی آمد یہ بتا تی ہے کہ انسانی زندگی حسرت و یاس سے خالی نہیں، اور دن یہ بتا تا ہےکہ بہت جلد زندگی کی صبح نمودارہونے والی ہے۔

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں